تزکیہ نفس

Sorry, this entry is only available in Urdu. For the sake of viewer convenience, the content is shown below in the alternative language. You may click the link to switch the active language.

تزکیہ نفس

لاشعوری میں آخر رہے گا تو کب تک                    بے قدر ہے گزاری زندگی تو نے اب تک

معصیت میں ترا دن، گزرتا ہے سارا                       سلسلہ یہ بدی کا، جاری رہتا ہے شب تک

طاقِ نسیاں پہ تو نے خود کو رکھا ہے کیوں              چھوڑ بیٹھا ہے تو، اخلاق و ادب تک

خوف و ڈر آخرت کا نہیں ہے تجھے کچھ                 بھول جائے گا اس دن تو اپنا نسب تک

راہِ عصیاں ہمیشہ، تیرا مقصد رہا ہے                      تجھ کو پہنچائے گا، یہ رب کے غضب تک

موت سے جس گھڑی تیرا پالا پڑے گا                     یاد تجھ کو نہ ہوگی زندگی کی طرب تک

ارتکابِ گناہ سے باز آئے گا تو جب                         تب ملے گی رسائی، تجھے اپنے رب تک

سرخرو ہوسکے گا کبھی نہ تو غافل                        تزکیہ نفسِ بد کا، نہ کرلے تو جب تک

چھوڑ دے معصیت کو، وقت باقی ہے کچھ                 نہ ملے گی معافی، جان ہوگی جب لب تک

نفس کا تزکیہ ہی، فلاح کا ہے ضامن                        کاش پہنچے صدا، اثریؔ کی یہ سب تک

About حافظ عبدالکریم اثری

Check Also

اختتام رمضان

Sorry, this entry is only available in Urdu. For the sake of viewer convenience, the …

Leave a Reply